11-Dec-2018 /02- Rabī-u-Thani-1440

Question # 7235


joint Family ka Taswur islam men.?

Assalam o alikum..plz joint family system k oper roshni daln k kia ye islam me jaiz he?agr maa daikhy k is ki waja sy bacho ki tarbiat pe Asar pr rha ho?r b bht sy masail hn to wo kia kry?shoher acha ho lakin wo alag rhny pe amada na ho to oorat ko kia krna chahia??

Category: Alimony and residence - Asked By: Mrs kashif abbasi - Date: Jul 05, 2018 - Question Visits: 36



Answer:


الجواب باسم ملھم الصواب حامدا و مصلیا
شرعا بیوی کا یہ قانونی حق ھے اور شوھر پر واجب ھے کہ شوھر اس کو کم از کم ایک کمرہ ایک کچن ایسا الگ کر کے دے جس میں وہ خود مختار ھو ،اور اس میں اس کے ماں باپ کا کسی قسم کا دخل نہ ھو ۔ اس حق کو دیتے ھوئے
جوئینٹ سسٹم میں رھا جا سکتا ھے ۔ مگر یہ ضروری ھے کہ شرعی پردہ قائم رھے اور بچوں کی تربیت متاثر نہ ھو ۔اگر شرعی پردہ خراب ھوتا ھو تو الگ ھو جائیں۔
اگر بچوں کی دینی تربیت گھر کے غیر دینی ماحول کی وجہ سے خراب ھو رھی ھے ،تو ادب سے والدین کو بیٹا کہ دے ۔اگر وہ تعاون کرنے پر آمادہ نہ ھو ،اور بچوں کی دینی تربیت خراب ھو رھی ھے تو ادب سے والدین سے اجازت لے کر الگ ھو جائے ۔مگر اولاد پر یہ لازم ھے کہ اپنے والدین کی خدمت اور خبر گیری میں کسی بھی قسم کی کمی نہ رکھے ۔ ھو سکے توھر روز اپنے والدین کی خدمت میں حاضر ھوتا رھے ۔
الگ ھونے کے بعد والدین کو بھول جانا اور انکی حق تلفی کرنا اور خبر گیری نہ کرنا،درست نہیں اور گناہ کبیرہ ھے ۔اس لئے دونوں باتوں کا لحاظ ضروری ھے کہ بیوی کا حق بھی ادا کرے ۔اور پنے والدین کا حق بھی ۔
اگر والدین اس حق کے دینے پر آمادہ نہ ھو تو بیٹے پر اس معاملے میں انکی اطاعت نہیں کیونکہ شرعا بیوی کا یہ حق واجب ھے اور واجب کا ترک گناہ ھے اور گناہ کے کام میں والدین کی اطاعت نہیں۔
و فی الھندیہ ۔۔

 تجب السکنی لہا علیہ في بیت خال عن أہلہ وأہلہا إلاأن تختار ذلک کذا في العینی شرح الکنز۔ (ہندیۃ، کتاب الطلاق، الباب السابع عشر في النفقات، الفصل الثاني في السکنی، 1/604

و فی الدر المختار۔۔
وکذا تجب لہا السکنی في بیت خال عن أہلہ وأہلہا۔ (الدرالمختار مع الشامي، کتاب الطلاق، باب النفقۃ، مطلب في مسکن الزوجۃ، ۵/۳۱۹-۳۲۰، کراچي
و فی بحر الرائق۔۔۔

السکنی في بیت أي الإسکان للزوجۃ علی زوجہا؛ لأن السکنی من کفایتہا فتجب لہا کالنفقۃ وقد أو جبہا اﷲ تعالیٰ کما أو جب النفقۃ بقولہ تعالیٰ (أسکنو ہن من حیث سکنتم من وجد کم) (الطلاق:6 …… وإذاوجبت حقالہا لیس لہ أن یشرک غیرہا فیہ لأنہا تتضرر بہ۔ (البحر الرائق، کتاب الطلاق، باب النفقۃ، کوئٹہ 4/193)

واللہ اعلم بالصواب
کتبہ محمد حماد فضل
نائب مفتی دارالافتا جامعہ طہ
الجواب صحیح
مفتی زکریا
مفتی جامعہ اشرفیہ لاھور
25 جون 2018
11 شوال 1439



Share:

Related Question:

Categeories