21-Jul-2019 /18- Dhū al-Qa‘dah-1440

Question # 7261


کفار کے ساتھ تجارت اور انکی مصنوعات کا استعمال کرنا

Baji ak msla darpesh hy, jin masnuaat ka bycot btaya gia tha, maslan nestly, unilever, trang, shell waghera to main in cheezon ko use nhi krti to ghar waly tanz karty hain k iphone b unhi ka hy jo tum use krti ho, or tumhari machien b germony ki hy wo kiun use krti ho, puchna ye tha k kia in cheezon ka bycot abi jari hy? Or kia iphone or semens ki machien b ghustakh mulk ki products hain, inka bycot krna chaiye ya nhi?

Category: Business and Trade (احكام البيوع والتجارة) / Allowed and prohibited sale - Asked By: ام حسان - Date: Feb 11, 2019



Answer:


الجواب باسم ملھم الصواب حامدا و مصلیا
کفار کے ساتھ تجارت جائز ھے ۔اور شرعا انکی مصنوعات کے استعمال میں کوئی ممانعت نہیں۔البتہ اگر کسی کافر ،یا زندیق کے بارے میں یقینی پتا چلے کہ وہ اپنی تجارت کا ایک متعین حصہ مسلمانوں کے خلاف استعمال کرتے ھیں تو ان کا بائکاٹ اس وجہ سے کیا جائے گا جیسے شیزان جو قادیانیوں کی ھے ۔
پچھلے دنوں علماء کی طرف سے ھالینڈ کے بائکاٹ کی مھم چلائی گئی تھی،جس کی وجہ گستاخانہ خاکوں کا مقابلہ رکوانا تھا ۔اب ان اشیاء کا استعمال کیا جا سکتا ھے اور بائکاٹ کا نہیں کہا جائے ۔البتہ اگر کوئی غیرت دینی کی بنا پر اب بھی انکی اشیاء استعمال نہ کرے تو ماجور ھو گا۔
واللہ اعلم بالصواب
کتبہ محمد حماد فضل
نائب مفتی دارالافتا جامعہ طہ
13 دسمبر 2018
4 ربیع الثانی 1440



Share:

Related Question:

Categeories