21-Jul-2019 /18- Dhū al-Qa‘dah-1440

Question # 782


Can we say Isha Prayer at the Time of Tahajjud?

تہجد کے وقت عشاء پڑھ سکتے ہیں

Category: Prayer (احكام الصلوة ) - Asked By: Abdul Rauf Khalid - Date: Oct 12, 2017



Answer:


الجواب باسم ملھم الصواب حامدا و مصلیا

عشاء کی نماز کا وقت صبح صادق تک رھتا ھے مگر عشاء کی نماز میں بلاعذر نصف رات سے زیادہ تاخیر کرنا مکروہ ھے ۔ البتہ نماز ادا ھو جائے گی ۔اگر اس تاخیر کرنے میں کوئی شرعی عذر مثل سفر یا مرض ھو تو مکروہ نہیں ۔

 أبی ہریرۃ قال: قال النبی صلی اللہ علیہ وسلم: لو لا أن أشق علی أمتی لأمرتہم أن یؤخروا العشاء إلی ثلث اللیل أو نصفہ۔ (سنن ترمذی ، باب ماجاء فی تاخیر العشاء الآخرۃ ، النسخۃ الہندیہ۱/٤۲، دارالسلام رقم١٤۷)
ووقت العشاء والوتر منہ ( ای من غروب الشفق) الی الصبح۔ (درمحتار ، ۲)
تاخیر العشاء الی ما قبل ثلث الیل مستحب والی ما بعدہ الی طلوع الفجر مکروہ اذا کان بغیر عذر۔ (منیۃ٨٤
و یستحب تأخیرہا إلی ثلث اللیل ، أو نصفہ ، ولاتکرہ بعدہ فی الأصح۔ (تحتہ فی الشامیۃ ) وقیل: تکرہ لأنہاتبع للعشاء فصارت کسنۃ العشاء (شامی کتاب الصلوٰۃ، باب الوتر والنوافل مبحث صلاۃ التراویح،

واللہ اعلم بالصواب کتبہ محمد حماد فضل نائب مفتی دارالافتا جامعہ طہ
10 اکتوبر 2017



Share:

Related Question:

Categeories