16-Oct-2018 /05- Ṣafar-1440

Question # 7232


آج کل کی مہندی لگا کر وضو ہو جاتا ہے۔؟

Assalam o alikum....aaj kl jo mehndi aarahe hain wo phly ky trha nhe utr rahn(matlb colour light nhe ho raha ).....or wo layers ky form mai uthr rahe hn....to kya ye lagana jaez hai?issy wazu hojata hai?agr nhe to phr ab namazn ka kya karn ...?...or agr kisi ko andaza na ho k kitni namazn qaza hoe hn to phr kya karn? Jazakillah..
Mrs Ariba

Category: Beauty and Beautification (أحكام الجمال والزينة) - Asked By: Mrs ariba - Date: Jun 23, 2018 - Question Visits: 36



Answer:


الجواب باسم ملھم الصواب حامدا و مصلیا
خواتین کے لئے مہندی استعمال کرنا پسندیدہ ھے ۔مگر مروجہ کون مہندی جو تہہ کی طرح اترتی ھے ، کا معاملہ مختلف ھے ۔
مروجہ کون مہندی جو تہہ کی شکل میں لگتی ھے اور جب اترتی ھے تو ایک چھلکا سا اترتا ھے جو اپنے پیچھے کوئی رنگ نہیں چھوڑتا، کے لگانے پر بندہ کا شرح صدر نہیں۔

اس کے دلائل درج ذیل ھیں۔

1۔یہ بالکل چھلکے کی طرح مختلف پرتوں میں اترتی ھے ۔
ایسا پینٹ کا اترنا ھوتا ھے ۔اصلی مھندی کا رنگ اس طرح نہیں اترتا ۔بلکہ مدھم ھو کر اترتا ھے ۔
2 ۔اس کو دو تین دن بعد کھرچے تو اسی طرح ٹکڑوں کی شکل میں اترتی ھے ۔اصل مہندی ایسے نہیں اترتی ۔
3۔جس جگہ سے اترتی ھے اس کے نیچے کی جلد بالکل صاف ھوتی ھے ، کوئی رنگ نہیں ھوتا ۔یہ واضح پتا رھا ھے کہ یہ ایک رنگدار جھلی نما تہہ تھی ۔جو اتر گئی اور اصل جلد نکل آئی
4۔بعض حضرات کا کہنا ھے کہ اترنے والی چیز تہہ نہیں بلکہ جلد ھے ۔ یہ بات درست معلوم نہیں ھوتی کیونکہ اس طرح تو جلد تباہ ھو جائے حالانکہ اس مہندی کی پرت جب اترتی ھے تو نیچے سے ملائم جلد اسی طرح نکل آتی ھے ۔نیز ھاتھ کی جلد کا اترنا پرت کی شکل میں نہیں ھوتا بلکہ ذرات کی شکل میں ھوتا ھے ۔ اور اس مین بھی تکلیف ھوتی ھے ۔
اس مروجہ کون مہندی میں یہ بات بھی نہیں ۔
5۔بعض حضرات نے کاغذ پر لگا کر چیک کرنے کا کہا، لیکن بندہ کو یہ اس لئے درست معلوم نہیں ھوتا کہ کاغذ اور جلد میں بہت فرق ھے ۔کاغذ گیلی مہندی کی وجہ سے پہلے ھی نرم پڑ جاتا ھے ۔

خلاصہ کلام یہ کہ ،ہر لحاظ سے یہ تہہ والی کون مہندی ، اصلی مہندی سے جدا ھے ۔

اسی لئے خواتین کو چاھئے کہ ایسی کون مہندی استعمال کریں جس میں یہ تہہ کی طرح چھلکوں کی صورت میں اترنا نہ ھو ۔

اسی لئے احتیاط اسی میں ھے کہ ایسی کون مہندی استعمال نہ کی جائے تا کہ وضو ،غسل میں مسئلہ نہ ھو ۔
احتیاطا جو نمازیں اس کے ساتھ وضو کر کے پڑھی ھیں ،ان کو لوٹا لیں۔
ھذا ما ظہر عندی
واللہ اعلم بالصواب
کتبہ محمد حماد فضل
نائب مفتی دارالافتا جامعہ طہ
23 جون 2018
8 شوال 1439 ھجری



Share:

Related Question:

Categeories